پیغمبر انسانیت کی زندگی کو سمجھنے کا احوال۔ یہ زندگی مبارک کہاں سے شروع ہوکر کن نشیب و فراز سے ہوتی ہوئی کہاں پر اختتام پذیر ہوئی!۔

 

ماہ ربیع الاول کا مبارک مہینہ شروع ہوچکا ہے ہر طرف رحمت دوجہاں حضرت محمد ﷺ کے تذکرے ہورہے ہیں پیغمبراسلام جو حقیقت میں پیغمبر انسانیت ہیں کی زندگی کے مختصرحالات کو جانے بغیران کی اس عظیم جدوجہد کی سمجھ نہیں آسکتی جس کے نتیجے میں وہ دنیا میں مسلمانوں کی صورت ایک عظیم اُمت تیار کرنے میں کامیاب ہوئے  ۔۔۔۔
آپ ﷺ کی عمر مبارل جب 4 سال کی ہوئی تو شق صدر (اُن کا سینہ کھولنے) کا واقعہ پیش آیا ۔ شق صدر کا واقعہ حضور ﷺ کو اپنی عمر میں چار مرتبہ پیش آیا اول بار 4 سال کی عمر میں اس وقت پیش آیا جب آپ ﷺ اپنی رضاعی ماں بی بی حلیمہ سعدیہ کی پرورش میں تھے ۔ ایک روز آپ ﷺ جنگل میں تھے کہ دو فرشتے جبرائیل اور میکائیل سفید پوش انسانوں کی شکل میں سونے کا طشت برف سے بھرا ہوا لے کر نموددار ہوئے آپ ﷺ کا شکم مبارک چاک کرکے قلب مطہر کو نکالا پھر قلب کو چاک کیا اور اس میں سے ایک یا دو ٹکڑے خون کے جمے  ہوئے نکالے اور کہا کہ یہ شیطان کا حصہ ہے ،پھر شکم اور قلب کو اس طشت میں رکھ کر برف سے دھویا ،بعد ازاں قلب کو اپنی جگہ پر رکھ کر سینہ پر ٹانکے لگائے اور دونوں شانوں کے درمیان ایک مہر لگا دی ۔
حلیمہ سعدیہ کے یہاں زمانہ قیام میں شق صد رکا واقعہ پیش آنا متعدد روایات میں مختلف صحابہ رضی اللہ عنہ  سے مروی ہے ۔
جب آپ ﷺ کی عمر مبارک 6 سال کی ہوئی تو آپ ﷺ کے سر سے آپﷺ کی والدہ حضرت آمنہ کا سایہ بھی چھن گیا۔
پھر آپﷺ کی کفالت آپﷺ کے دادا حضرت عبدالمطلب نے لے لی لیکن وہ بھی زیادہ سال نہ چل سکی جب آپ ﷺ 8 سال کے ہوئے  تو وہ بھی وفات پا گئے ۔  اس کے بعد آپﷺکے چچا ابوطالب نے آپ ﷺ کی ذمہ داری اٹھائی۔

آپ نے بارہ سال کی عمر میں پہلا سفر شام کی طرف تجارت کے غرض سے کیا ۔
۔25 سال کی عمر میں شام کا دوبارہ سفر حضرت خدیجہ رضی اللہ عنہا کا تجارتی سامان کے ساتھ  کیا  اور اسی سال آپ ﷺ کا نکاح حضرت خدیجہ بنت خویلد سے ہوا۔
۔28 سال کی عمر میں اللہ رب العزت نے آپ ﷺ کو بیٹے قاسم رضی اللہ عنہ سے نوازا۔
۔30 سال کی عمر میں پہلی بیٹی حضرت زینب رضی اللہ عنہا کی پیدائش ہوئی ۔
۔32سال کی عمر میں دوسرے بیٹے حضرت عبداللہ رضی اللہ عنہ کی پیدائش ہوئی ۔
۔33  سال کی عمر میں دوسری بیٹی حضرت رقیہ رضی اللہ عنہا کی پیدائش ہوئی۔
۔34 سال کی عمر میں تیسری بیٹی حضرت ام کلثوم رضی اللہ عنہا کی پیدائش ہوئی۔
۔35 سال کی عمر میں خانہ کعبہ میں حجرا سود نصب کرنے کا واقعہ پیش آیا  اور اسی سال آپ ﷺ کی چوتھی بیٹی حضرت فاطمہ رضی اللہ عنہا کی پیدائش ہوئی۔
۔40 سال کی عمر میں آپ ﷺ پر پہلی وحی نازل ہوئی ۔اور آپ نے خفیہ طریقے سے اسلام کی دعوت شروع کی ۔
۔43 سال کی عمر میں آپ نے یہ دعوت اعلانیہ طور پر شروع کی ۔
۔45 سال کی عمر میں مسلمانوں نے پہلی ہجرت حبشہ کی طرف کی ۔
۔47 سال کی عمر میں مظالم قریش اور شعب ابی طالب   میں محصوری کا واقعہ پیش آیا ۔
۔50 سال کی عمر میں آپ ﷺ کے دو عظیم خیرخواہوں اُم المومنین حضرت خدیجہ رضی اللہ عنہا  اور چچا ابو طالب کا انتقال ہوا ۔ اسی سال آپ ﷺ نے حضرت سودہ رضی اللہ عنہا اور حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا سے  نکاح کیا ۔ سفر طائف بھی اسی سال کیا ۔
۔51 سال کی عمر میں معراج کا واقعہ اور مدینہ منورہ میں اسلام کی ابتداء ہوئی ۔
۔52 سال کی عمر میں بیعت عقبہ اول ہوئی ۔
۔53 سال کی عمر میں بیعت عقبہ ثانی ہوئی اسی سال آپ ﷺ کو قریش نے جانی نقصان پہنچانے کا ارادہ بھی کیا ، اسی سال غار ثور کاواقعہ بھی پیش آیا ہجرت مدینہ بھی اسی سال ہوا مدینہ منورہ میں قیام ،مسجد نبوی کی تعمیر، مہاجرین و انصار میں بھائی چارہ اور یہود مدینہ سے معاہدہ بھی اسی سال ہوئے ۔
۔54 سال کی عمر میں پہلا غزوہ بدر ہوا ۔
۔55 سال کی عمر میں غزوہ اُحد ہوا۔
۔57 سال کی عمر میں غزوہ خندق ہوا۔
۔58 سال کی عمر میں صلح حدیبہ ہوا ۔
۔59 سال کی عمر میں غزوہ خیبر ہوا اسی سال عمرۃ القضاء بھی ہوا۔
۔60 سال کی عمر میں غزوہ موتہ ہوا اور اسی سال فتح مکہ کا واقعہ بھی پیش آنے کے ساتھ ساتھ غزوہ حنین اور غزوہ طائف بھی ہوا ۔
۔61 سال کی عمر میں حضرت ماریہ قبطیہ رضی اللہ عنہا سے آپ ﷺ کے بیٹے ابراہیم رضی اللہ عنہ کی پیدائش ہوئی ۔اسی سال غزوہ تبوک اور حضرت ابوبکر صدیق رضی اللہ عنہ کی امارت میں پہلا حج ہوا ۔
۔62 سال کی عمر میں حجۃ الوداع  ہوا ۔
۔63 سال کی عمر میں آپ ﷺ اس دنیا سے وصال کر گئے ۔

By pkadmin

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *