کراس روڈز ٹوئنٹی فور ڈاٹ کام رپورٹ

پشاور کے موضع چغرمٹی میں اصحاب بابا کے نام سے مشہور مزار صحابی رسولﷺ حضرت سنان بن سلمہ رضی اور ان کے ساتھیوں کا ہے جو خلفائے راشدین کے دور میں یہاں آئے اورجنگ میں شہید ہوگئے۔

تاریخ کی مختلف کتابوں اوردیگر حوالوں سے حاصل کی گئی معلومات کے مطابق کمان ملنے کے بعد حضرت سنان رضی اللہ عنہ نے سب سے پہلے مکران میں بغاوت کو کچلا اور پھر قلات اورکوئٹہ کو فتح کرنے کے بعد ڈیرہ اسماعیل خان، بنوں اورکوہاٹ کے راستے پشاور پہنچے جہاں پر داودزئی کے علاقے میں چغرمٹی کے مقام پر ان کی غیرمسلموں سے جنگ ہوئی اوریہ سب یہاں شہید ہوگئے اوریہی پران کو دفنا دیا گیا۔
تاریخ کے مختلف حوالوں میں حضرت سنان رضی اللہ عنہ اوران کے ساتھیوں کی پشاور آمد کے حوالے الگ الگ ہیں کسی جگہ ان کے بارے میں لکھا ہے کہ وہ خلیفہ سوم حضرت عثمان غنی رضی اللہ عنہ کے دور میں یہاں آئے اورکچھ کا کہنا ہے کہ وہ حضرت امیر معاویہ رضی اللہ عنہ کے دور میں آئے تھے۔

پشاور میں مزار کا محل وقوع:۔

پشاور شہر کی طرف سے اصحاب بابا جانے کا آسان راستہ چارسدہ روڈ پر باچہ خان چوک سے پجگی روڈ سے ہوکر جاتا ہے جس سے بشیرآباد، تیراو، فقیرکلے او پجگی کے بعد چغرمٹی پہنچا جاسکتا ہے۔ جہاں پر یہ مشہورمزار واقع ہے۔
اس مزار پر روزانہ دور و نزدیک سے لوگوں کی بڑی تعداد فاتحہ خوانی کرنے آتی ہے۔ مزار کے احاطے میں موجود قبر عام طور پربننے والی قبروں سے زیادہ لمبی ہے اندازہ ہے کہ یہ سو فٹ لمبی قبر ہے جس میں حضرت سنان اور ان کے اڑتیس یا انتالیس ساتھی ایک ساتھ دفن ہیں مزار کا ایک حصہ مردوں اوردوسرا عورتوں کے لئے مختص ہے جو ایک دیوار کے ذریعے الگ کئے گئے ہیں۔ یہاں آنے والے لوگ ان صحابہ رضی اللہ عنہم کی اس علاقے میں آمد کو اپنی خوش بختی سمجھتے ہیں۔

یہاں آنے والے کہتے ہیں یہاں جتنے بھی بیمار آئے ہیں وہ ٹھیک ہوئے ہیں کینسر کے مریض بھی یہاں ٹھیک ہوجاتے ہیں۔ یہاں لنگر میں چائے پانی پیتے ہیں تو اللہ ان پر رحم کرلیتا ہے اوریہ ٹھیک ہوجاتے ہیں۔
مزار کے احاطے میں یہاں آنے والوں کے لئے ایک چھوٹا سا لنگرخانہ اوربیٹھنے کی جگہ بنائی گئی ہے جہاں انہیں پینے کا ٹھنڈا پانی پیش کیا جاتا ہے یہی پر ان زائرین کے لئے نمک بھی رکھا گیا ہے جسے ہر ہفتے دو دن تک جاری رہنے والے ختم قرآن و ذکر کے بعد دم کیا جاتا ہے لوگ یہ نمک چکھتے بھی ہیں اورساتھ بھی لے کر جاتے ہیں۔

یہاں کے کچھ مستقل زائرین یعنی خدمتگار بھی ہیں جو کہتے ہیں کہ یہاں پر ختم قرآن اور ذکر کی محافل جمعرات کی صبح سے شروع ہوکر رات تک چلتی ہیں اوراس کے بعد یہ جمعہ کی صبح پھر شروع ہوجاتی ہیں جن کے اختتام پر میں اس نمک کو دم کیا جاتا ہے۔ یہ تو اللہ کا کام ہے جسے شفا دے۔ یہاں پر دور و نزدیک سے لوگ آتے ہیں سوات سے آتے ہیں کالام سے آتے ہیں کراچی سے اور ہر شہر سے لوگ آتے ہیں۔

By pkadmin

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *